امریکہ کتنا طاقتور ہے؟

امریکہ کتنا طاقتور ہے؟

 امریکہ کتنا طاقتور ہے

سب سے پہلے امریکہ کی فوجی طاقت دیکھیں تو ایران اور شمالی کوریا کے علاوہ دنیا کے ہر ملک میں یا اس کی سرحد پر امریکہ فوجی اڈا یا انسٹالیشنز موجود ہیں۔ امریکہ کے ملک سے باہر آٹھ سو فوجی اڈے یا ایکٹو انسٹالیشنز ہیں۔ جبکہ امریکہ کے بعد سب سے طاقتور سمجھے جانے والے ممالک برطانیہ، فرانس اور روس کے کل ملا کر صرف تیس بیرون ملک اڈے ہیں۔ اس سے اندازہ لگائیں کہ امریکہ کے فوجی بازو عملی طور پر کتنے لمبے ہیں۔

امریکہ کا سالانہ دفاعی بجٹ چھے سو پچاس ارب ڈالر ہوتا ہے۔ جو امریکہ کے بعد سب سے زیادہ دفاعی بجٹ خرچ کرنے والے ممالک چین، روس، برطانیہ، فرانس، جاپان، سعودی عرب، اور بھارت کے مجموعی دفاعی بجٹ سے بھی زیادہ ہے۔ نیٹو کی انتہائی طاقتور فوج کا زیادہ تر بجٹ بھی امریکہ ہی برداشت کرتا ہے اس لیے نیٹو کو بھی امریکی فوج کا لانگ آرم کہا جاتا ہے۔

آج کی دنیا میں ائرکرافٹ کیرئر شپ کو بہت پراثر ہتھیار مانا جاتا ہے۔ امریکا کے پاس دنیا میں سب سے زیادہ گیارہ ائرکرافٹ کیریئرز ہیں۔ جبکہ روس، برطانیہ، فرانس اور چین میں سے کسی کے پاس بھی دو سے زائد ائرکرافٹ کیرئرز نہیں ہیں۔ امریکہ کا سیاسی اثرورسوخ بھی دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ پورا یورپ امریکہ کے اثر میں اس لیے ہے کہ اسے روس جیسی بڑی طاقت کی جارحیت کے مقابلے کیلئے کسی بڑے اتحادی کی ضرورت ہوتی ہے اور وہ امریکہ کی شکل میں اسے دستیاب ہے۔ عالمی سیاست میں اہم ترین کردار ادا کرنے والے دنیا کے تین بہت بڑے ادارے اقوام متحدہ، ورلڈ بنک اور نیٹو امریکی فنڈنگ کے بغیر قائم ہی نہیں رہ سکتے۔ کیونکہ ان تینوں اداروں کا سب سے بڑا ڈونر امریکا ہے۔

علمی اور تحقیقی طور پر امریکہ اس لیے دنیا بھر سے آگے ہے کہ دنیا کی ٹاپ بیس یونیورسٹیز میں سے سترہ امریکہ میں ہیں۔ سیلی کان ویلی جہاں دنیا بھر کی جدید ٹکنالوجی جنم لیتی ہے امریکی ریاست کیلی فورنیا میں ہے اور یہاں دنیا بھر سے بہترین دماغ کام کی تلاش میں آتے ہیں یا انھیں اچھے پیکیج پر بلا لیا جاتا ہے۔

۔معاشی لحاظ سے دیکھیں تو امریکہ کا جی ڈی پی 18.57 ٹریلین ڈالر کے ساتھ دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ امریکہ کے بعد دنیا میں سب سے زیادہ جی ڈی پی چین کا ہے جو امریکہ سےسات ٹریلین ڈالر کم ہے۔ دنیا کی مہنگی ترین اور جدید ترین مصنوعات امریکہ میں تیار ہوتی ہے یعنی امریکہ کا ٹریڈ پروفائل فسٹ ورلڈ کا ہے جبکہ چین اور روس کا ٹریڈ پروفائل تھرڈ ورلڈ کا ہے۔

امریکہ میں دنیا کا سب سے زیادہ کوئلہ اور دسویں نمبر پر سب سے زیادہ تیل کے ذخائر بھی ہیں۔ امریکہ دنیا کی سب سے پرانی اور کامیاب جمہوریت ہے جس میں دو صدیوں سے تعطل نہیں آیا۔ اس ڈیموکریسی میں امریکہ کے ادارے وقت کے ساتھ ساتھ خودمختار اور مضبوط ہو گئے ہیں۔ اور یہی ادارے امریکہ کی اندرونی طاقت کا راز ہیں۔ اس کے علاوہ ہالی ووڈ کی پروپیگنڈا پاور اور انگلش زبان کا دنیا بھر میں سمجھا جانا بھی امریکہ کی طاقت میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

امریکہ اپنے جغرافیے کے اعتبار سے دنیا کا بہترین محل وقوع رکھتا ہے۔ اس کے مشرق اور مغرب میں ہزاروں کلومیٹر کا سمندر امریکہ کیلئے سٹریٹیجک ڈیپتھ کا کام کرتا ہے۔ جبکہ امریکہ کے اپنے ہمسائیوں میں سے کسی سے تعلقات اتنے خراب نہیں کہ اس کی زمین کو امریکہ کے خلاف استعمال کیا جا سکے۔ تو مختصر یہ کہ امریکہ دنیا کی واحد سپر پاور ہے۔ لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ دنیا امریکہ کی مرضی سے چلتی ہے۔ کیونکہ امریکہ کو اپنا اثرورسوخ رکھنے کیلئے بہت زیادہ بجٹ خرچ کرنا پڑتا ہے اور بجٹ بڑا رکھنے کیلئے مسلسل ایکسپورٹس بڑھانا ہوتی ہیں۔ اور ایکسپورٹس بڑھانے کیلئے مسلسل اپنی پراڈکٹس میں جدت لانا ہوتی ہے۔ ان کڑیوں میں سے ایک بھی کڑی اگر کم ہو جائے تو امریکہ کا سپر پاور سٹیٹس اور ورلڈ آرڈر خطرے میں پڑ جائے گا۔ تاہم اگلی دو،تین دہائیوں تک امریکی ورلڈ آرڈر کو بظاہر چین اور روس سمیت کسی سے خطرہ نہیں ہے۔ کیونکہ یہ تمام ممالک اپنی معیشت، جدت اور دفاعی لحاظ سے امریکہ سے بہت پیچھے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top