الیکشن2018مبصرین اور عالمی میڈیا کے لیے قوانین

election 2018 and international media

الیکشن2018مبصرین اور عالمی میڈیا کے لیے قوانین

پاکستان میں 25 جولائی 2018 کو الیکشن کا انعقاد ہونے جا رہا ہے اور جیسا کہ روایت ہے اور پوری دنیا میں ہوتا ہے ان الیکشنز کی شفافیت کی جانچ کے لیے دنیا بھر سے میڈیا اور مبصر آتے ہیں۔ پاکستان کے حالیہ انتخابات کے لیے بھی مبصرین آئیں گے، اس سلسلے میں الیکشن کمیشن آف پاکستان نے عالمی مبصرین اور عالمی میڈیا کے لیے ضابطہ اخلاق جاری کردیا ہے۔

الیکشن کمیشن کے مطابق ضابطہ اخلاق 16 نکات پر مشتمل ہے اور کوئی بھی شخص جو ان نکات کی خلاف ورزی کرے گا اس کا اجازت نامہ منسوخ ہو جائے گا۔ ضابطہ اخلاق کے مطابق بین الاقومی مبصرین اور عالمی میڈیا گروپوں کو حلف نامہ بھی جمع کرانا ہوگا اور پاکستان میں قیام کے دوران پاکستان کی خودمختاری ،شہریوں کے بنیادی حقوق اور آزادی کا خیال رکھنا لازم ہوگا۔ یہ مبصر اور عالمی میڈیا کے کارکن سیاسی وابستگیوں سے آزاد رہیں گے اور الیکشن میں شامل امیدواروں کے حوالے سے غیر جانبدارازنہ رویہ رکھیں گے۔

الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری کیے گئے ضابطہ اخلاق کے مطابق بین الاقومی مبصرین اور عالمی میڈیا کے کارکن پاکستان کے مقامی ٹی وی یا اخبارات میں اپنی ذاتی رائے نہیں دے سکیں بے بلکہ ان مبصر تنظیموں کا کوئی نامزد شخص عام انتخابات پر مجموعی طور پر رائے دے گا۔ ضابظہ اخلاق میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ جوں ہی ویزا ختم ہوگا مبصرین اور میڈیا میں سی کوئی بھی شخص پاکستان میں قیام نہیں کر سکے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top