وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی، دکھاوا یا حقیقت؟ نور اللہ

PM House Pakistan

وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی، دکھاوا یا حقیقت؟ نور اللہ

انتخابی مہم کے دوران کئے گئے وعدوں میں سے ایک وعدہ وزیراعظم ہاؤس کو یونیورسٹی میں تبدیل کرنا تھا جس کو عملی شکل دینے کےلئے اس کے کچھ حصے پر ایک یونیورسٹی قائم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے

ایک اور انتخابی وعدے یعنی وزیراعظم ہاؤس میں رہائش نہ رکھنے کو عملی شکل اس طرح دی گئ کی عمران خان صاحب وزیراعظم ہاؤس کے اس رہائشی حصے میں قیام پذیر ہیں جو انکے ملٹری سیکرٹری کے لئے مختص ہے اور ملٹری سیکرٹری وزیراعظم کے لئے مختص رہائش میں قیام کررہے ہیں اور اب جبکہ وزیراعظم ہاؤس میں خود وزیراعظم صاحب٫ انکے ملٹری سیکرٹری اور دیگر سٹاف ممبران کی رہائش اور تمام دفاتر کام کر رہے ہیں تو ایک حصے میں یونیورسٹی بھی قائم کی جارہی ہے جو اصل وعدے کی عملی تصویر تو نظر نہیں آتی لیکن پھر بھی سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا وطن عزیز میں امن وامان کی صورتحال اتنی اچھی ہو گئی ہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی کی سرگرمیاں جاری رکھی جاسکتی ہیں ؟

ابھی چند روز قبل ہی سیکیورٹی الرٹ کے باعث ایوان صدر کو عوام کے لئے ہفتے میں ایک دن چند گھنٹوں کے لئے کھولنے کے عمل کو روکنا پڑا ایسے حالات میں وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی میں تدریس و ریسرچ کا عمل تسلسل کے ساتھ کیسے جاری رہ سکے گا ؟ اور یونیورسٹی کیمپس کی تعمیر کی صورت میں جو خرچ ہوگا کیا مستقبل قریب میں اس یونیورسٹی کے کیمپس کی کسی دوسری جگہ منتقلی کی صورت میں ضائع تو نہیں ہو جائے گا ؟

اگر وزیراعظم ہاؤس میں یونیورسٹی کا قیام محض ایک دکھاوا نہیں تو متعلقہ حکام کو سیکیورٹی کے حوالے سے موجود تحفظات کا جائزہ لینا چاہئے تاکہ آنے والے وقت میں شرمندگی اور قومی خزانے کو نقصان سے بچا جاسکے-

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top