تحریک انصاف یا ن لیگ۔۔۔ سروے کیا کہتے ہیں؟

Survey: PTI or PMLN

تحریک انصاف یا ن لیگ۔۔۔ سروے کیا کہتے ہیں؟

الیکشن کے دنوں میں انتخابی رجحانات کا اندازہ لگانے کے لیے ہر ملک میں سرویز معنقد ہوتے ہیں۔ 25جولائی 2018کے انتخابات کے حوالے سے تین اہم سرویزے سامنے آچکے ہیں۔ ان سرویز سے یہ اندازہ لگانے کی کوشش کی گئی ہے کہ لوگوں کی انتخابی ہمدردیاں کن کے ساتھ ہیں۔ آئیے ہم آپ کو ان تینوں سرویز کے نتائج سے متعلق بتاتے ہیں۔

پہلا سروے۔۔۔ تحریک انصاف کی سبقت

پلس کنسلٹنٹ کے سروے کے مطابق مسلم لیگ ن اور پاکستان تحریک انصاف کے درمیان کانٹے دار مقابلہ متوقع ہے۔ اس سروے کے مطابق اس وقت پورے پاکستان میں مسلم لیگ ن کا ووٹ بنک 27فیصد ہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کا ووٹ بنک 30 فیصد ہے۔ جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کا ووٹ بنک پورے پاکستان میں 17 فیصد ہے۔

دوسرا سروے ۔۔۔ مسلم لیگ ن آگے

دوسری طرف گیلپ سروے کے مطابق مسلم لیگ ن کا ووٹ بنک 26 فیصد ہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کا ووٹ بنک 25 فیصد ہے۔ جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کا ووٹ بنک 16 فیصد ہے ۔

پنجاب میں کون میدان مارے گا

انسٹی ٹیوٹ آف پبلک اوپینئین ریسرچ کی جانب سے بھی ایک سروے کیا گیا ہے۔ یہ ملک گیر سروے نہیں ہے بلکہ یہ سروے پنجاب تک محدود ہے۔ یہ سروے ایک ماہ پرانا ہے اور اس کے مطابق مسلم لیگ ن کی پنجاب میں مقبولیت 51 فیصد جبکہ پاکستان تحریک انصاف کی 30 فیصد ہے۔

سروے میں کہا گیا ہے کہ سنٹرل پنجاب میں مسلم لیگ ن کا ووٹ بنک 55 فیصد ہے جبکہ یہاں پر پی ٹی آئی کا ووٹ بنک 30 فیصد ہے۔ جبکہ ویسٹرن پنجاب یعنی میانوالی اور بھکر وغیرہ میں مسلم لیگ ن کا ووٹ بنک 52 فیصد ہے جبکہ پی ٹی آئی کا ووٹ بنک 31 فیصد ہے۔ سروے کے مطابق مسلم لیگ ن کا جنوبی پنجاب میں ووٹ بنک 49 فیصد ہے جبکہ پی ٹی آئی کا ووٹ بنک 29 فیصد ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top