عمران خان قومی اسمبلی کے کن حلقوں سے میدان میں اتریں گے؟

عمران خان قومی اسمبلی کے کن حلقوں سے میدان میں اتریں گے؟

عمران خان بمقابلہ سعد رفیق

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان جولائی 2018 کے قومی انتخابات میں پنجاب سندھ اور خیبرپختونخوا سے پانچ نشستوں کے لیے امیدوار ہوں گے۔ عمران خان این اے 131 لاہور سے قومی اسمبلی کے امیدوار ہوں گے، جہاں ان کے مدمقابل ہیں خواجہ سعد رفیق۔ خواجہ سعد رفیق نے الزام لگایا ہے کہ لاڈلے کے لیے خصوصی طور پر یہ حلقہ تیار کیا گیا، ان کا اشارہ حلقہ بندیوں کی طرف تھا۔ ان کے مطابق حلقہ این اے 131 کی تشکیل میں قانونی اصولوں اور نیچرل باؤنڈری کے بنیادی اصول پامال کیے گئے۔ گذشتہ انتخابات میں لاہور کے حلقے این اے 126سے عمران خان میدان میں اترے تھے جہاں سے سردار ایاز صادق نے انہیں شکست دی تھی۔ اس حلقے کے نتائج کے حوالے سے تحریک انصاف نے دھاندلی کا الزام بھی لگایا تھا۔

عمران خان کا آبائی حلقہ

این اے 95 میانوالی کا حلقہ وہ دوسرا حلقہ ہے جہاں سے تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔ الیکشن 2013میں عمران خان یہاں سے بھاری اکثریت کے ساتھ کامیاب ہوئے تھے۔

عمران خان بمقابلہ اکرم درانی

بنوں کے حلقے این اے 35 سے بھی سربراہ تحریک انصاف عمران خان قومی اسمبلی کے امیدوار ہیں۔ یہاں عمران خان کو شکست دینے کے لیے ایم ایم اے، پیپلز پارٹی، مسلم لیگ ن اور اے این پی نے سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا سہارا بھی لیا ہے۔ اس حلقے میں عمران خان کے مدمقابل سابق وزیر اعلی خیبر پختونخوا اکرم درانی ہیں۔ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا فارمولا یہ رکھا گیا ہے کہ این اے 35میں باقی جماعتیں ایم ایم اے اور جے یو آئی ف کے امیدوار اکرم درانی کا ساتھ دیں گی جس کے بدلے میں باقی پارٹیاں این اے 3سوات میں شہباز شریف جبکہ این اے 8 پر پاکستان پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹوزرداری کی حمایت کریں گی۔

عمران خان سندھ کی سیاست میں

عمران خان جس چوتھی نشست پر الیکشن لڑیں گے وہ ہے کراچی کے گلشن اقبال کا حلقہ این اے 243 جو ہمیشہ سے ایم کیوایم کا گڑھ رہا ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا عمران خان وہاں کسی قسم کا بریک تھرو کر سکتے ہیں کہ نہیں۔ ایم کیو ایم کے متنازعہ سربراہ فاروق ستار کے مطابق اس حلقے سے عمران خان کا مقابلہ علی رضا عابدی کریں گے۔

راولپنڈی کا حلقہ این اے 61

اس کے علاوہ راوالپنڈی کے حلقے این اے 61 سے بھی سربراہ تحریک انصاف امیدوار ہیں۔ یہ وہی حلقہ ہے جس کی سیٹ گذشتہ انتخاب میں متعدد نشستوں میں سی چنی تھی۔ اسلام آباد کے حلقہ این اے 53 کے لیے بھی عمران خان نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے مگر آخری اطلاعات یہ ہیں کہ وہاں ان کے کاغذات مسترد ہو چکے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top