خواجہ سعد رفیق کے آبائی گھر کی قیمت صرف 65ہزار روپے

khawaja saad rafique house

خواجہ سعد رفیق کے آبائی گھر کی قیمت صرف 65ہزار روپے

خواجہ سعد رفیق کے کل اثاثے

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے قواعد ضوابط کے مطابق سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق  نے بھی کاغذات نامزدگی کے ہمراہ اپنے اثاثوں کی تفصیل جمع کرائی ہے۔ جن کے مطابق لاہور شہر میں ان کے دو مکان ظاہر کیے گئے ہیں جو انہیں ورثے میں ملے تھے جن کی قیمت ایک لاکھ 25 ہزار روپے بتائی گئی ہے۔ خواجہ سعد رفیق نے اپنا بینک بیلنس 15 لاکھ روپے، شیئرز ایک کروڑ 15 لاکھ روپے اور ایک کروڑ 40 لاکھ روپے نقدی اور پرائزبانڈز ظاہر کیے ہیں۔خواجہ سعد رفیق نے الیکشن کمیشن کو اپنے اثاثوں کی مجموعی مالیت 17 کروڑ 44 لاکھ روپے بتائی ہے جس میں اندرون شہر لاہور کے علاقے لوہاری کے وہ 2 مکانات بھی شامل ہیں جو ان کے اور ان کے بھائی کی ملکیت ہیں۔ سابق وزیر ریلوے نے دونوں مکانوں کی قیمت مبلغ سوا لاکھ روپے بتائی ہے یعنی ایک مکان کی اوسط قیمت 65 ہزار روپے بنتی ہے۔

خواجہ سعد رفیق اپنے کزن کے مقروض

دستاویز میں خواجہ سعد رفیق نے ڈی ایچ اے فیز ٹو میں ایک گھر بھی ظاہر کیا ہے جس کی مالیت 4 کروڑ 82 لاکھ روپے دکھائی گئی ہے۔ اس کے علاوہ  لاہور کینٹ میں 3 کروڑ 46 لاکھ مالیت کی 16 کنال اراضی بھی ظاہر کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے لاہور کینٹ میں ہی مزید 16 کنال اراضی بھی ظاہر کی ہے جس کی مالیت 3 کروڑ 45 لاکھ روپے ظاہر کی گئی ہے۔ خواجہ سعد رفیق کے مطابق انہوں نے اپنے کزن سے 2 کروڑ 95 لاکھ روپے کا بلا سود قرضہ بھی لے رکھا ہے، ان کی سعدین ایسوسی ایٹس کی مالیت 2 کروڑ 98 لاکھ روپے بیان کی گئی ہے۔ خواجہ سعد رفیق نے اپنے کاغذات نامزدگی میں  ایک کروڑ 40 لاکھ روپے نقدی اور پرائزبانڈز ظاہر کیے ہیں جبکہ 15 لاکھ روپے بینک بیلنس، 25 لاکھ روپے مالیتی فرنیچر اور  ایک کروڑ 15 لاکھ روپے کے شیئرز ظاہر کیے ہیں۔سابق وزیر ریلوے نے 2015 میں 2 کروڑ 26 لاکھ روپے اور 2016 میں اپنی آمدنی 2 کروڑ 99 لاکھ روپے ظاہر کی ہے۔ انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی میں 2 بیویوں کا تذکرہ کیا ہے اور بتایا ہے کہ ان کی پہلی بیوی کا نام غزالہ سعد اور دوسری اہلیہ کا نام شفق حرا ہے۔

گذشتہ تین سال کا ٹیکس اور آمدن کا ریکارڈ

خواجہ سعد رفیق کی 2015میں 2کروڑ26لاکھ روپے آمدن اور 29لاکھ روپے انکم ٹیکس دیا،2016میں 2کروڑ99لاکھ روپے آمدن ہوئی اور39لاکھ روپے کا انکم ٹیکس ادا کیا،خواجہ سعدرفیق کو 2017میں 3 کروڑ 89 لاکھ روپے کی آمدن ہوئی جبکہ انہوں نے 52لاکھ روپے انکم ٹیکس ادا کیا،سعدرفیق نے تین برسوں میں زرعی انکم ٹیکس بالکل بھی ادا نہ کیا نہ ہی زرعی انکم بیان کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top