حسین حقانی اور ریحام خان کی ملاقات کیسے ہوئی؟

حسین حقانی اور ریحام خان کی ملاقات کیسے ہوئی؟

عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان اپنی زندگی پر کتاب لکھ رہی ہیں جو کہ بہت جلد شائع ہونے والی ہے۔ کتاب ابھی پبلش نہیں ہوئی مگر کتاب کے کچھ صفحات جو لیک ہوئے ہیں ان میں مریم نواز، شہباز شریف، احسن اقبال ، ریحام خان کے سابق شوہر ڈاکٹر اعجازالرحمان، عمران خان کے قریبی دوست زلفی بخاری، سابق ٹیسٹ کرکٹر وسیم اکرم اور انیلا خواجہ کا ذکر ہے۔

ایک نجی ٹی وی پر انٹرویو دیتے ہوئے ریحام خان کا کہنا تھا کہ لیگل نوٹسز ہراساں کرنے، ڈرانے اورایک عورت کو خاموش کرنے کی کوشش ہے۔ اگست 2017 سے حمزہ عباسی مجھے ای میل کرکے ہراساں کر رہے ہیں۔

اپنے بیٹے کے ساتھ شاپنگ کرتے ہوئے حسین حقانی سے ملاقات ہوئی۔ پی ٹی آئی نے میرے پیچھے بندے لگائے ہوئے ہیں جو مجھے فالو کرتے ہیں۔ لیگل نوٹس کا جواب چینل پر نہیں دوں گی۔

جو کتاب چل رہی ہے لگ یہ رہا ہے کہ یہ حمزہ عباسی کی کتاب ہے۔ جب کتاب آئے گی تو پتہ چل جائے گا کس کس کا ذکر ہے،ابھی کسی کا نام نہیں بتاوں گی۔میری کتاب میں لکھی باتیں ملکی مفاد کیلئے ہیں۔ پی ٹی آئی  کے لوگ ثبوت کے بغیر بات کرتے ہیں انہیں اپنی عادتیں بدلنی پڑھیں گی، اگر کسی کو کتاب چاہیئے تھی تو لیگل طریقے سے مجھے سے ری ویو کیلئے مسودہ مانگ سکتا تھا۔میرے پاس مریم نواز کے دیئے ہوئے پاونڈز نہیں تھے جس سے میں کتاب کی تشہیر کر سکتی ، پی ٹی آئی کا شکریہ ادا کرتی ہوں جنہوں نے تشہیر میں میری اتنی مدد کی۔

جب مجھے موت کی دھمکی دی گئی تب میں نے سوچا کہ کتاب لکھوں۔ اگر مجھے ، ڈرگز، سیکس والی باتیں پہلے پتہ ہوتی تو عمران خان سے شادی نہ کرتی اور نہ ہی پی ٹی آئی کو ووٹ دیتی، مجھے یہ سب باتیں شادی کے بعد پتہ چلیں۔ اگر میری کتاب پبلش کرنے کیلئے کوئی تیار نہیں تو پی ٹی آئی کو ڈر کس بات کا ہے؟

پی ٹی آئی کو چاہیئے کہ اپنی سوشل میڈیا ٹیم، وکیل اور میڈیا نمائندگان کو بدل دیں اور مزید اپنا نقصان نہ کریں۔ شادی کا اعلان تو مجھے نہیں کرنے دیا تھا کم سے کم کتاب کی رونمائی کا اعلان تو مجھے کرنے دیں۔ میں نے کتاب میں یہ نہیں لکھا کہ عمران خان شیطان ہیں، شہباز شریف کے ساتھ میری جو ملاقات ہوئی میں نے اس ملاقات کے بارے میں سب لکھا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ حمزہ علی عباسی کو جعلی ای میلز پر نوٹس بھیج چکی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top