26b-اسامہ قتل سے دو دن پہلے جنرل کیانی کس امریکی کو ملے؟

26b-اسامہ قتل سے دو دن پہلے جنرل کیانی کس امریکی کو ملے؟

آئی ایس آئی اور بھارتی خفیہ ایجنسی را کے سابق سربراہان کی تہلکہ خیز کتاب کا خلاصہ ۔۔۔چھبیسواں باب (پارٹ ٹو)

کیا کیانی کو اسامہ کے حوالے سے تعاون پر فارم ہائوس اور بلین ڈالرز ملے؟

جنرل درانی نے بتایا کہ اگر اسامہ کے خلاف آپریشن میں کیانی کو فارم ہائوس اور بلین ڈالرز ملے ہیں تو میں خود ان کے خلاف مہم چلائوں گا۔ حالانکہ کیانی کے بارے میں میرے احساسات یہ ہیں کہ وہ ہمارے ان آرمی چیفس میں ہیں جو سوچنے والے تھے۔ اس پر سابق راچیف نے کہا کہ اسامہ کے قتل سے چند دن قبل کیانی ایک ائیر بیس پر کسی شخص سے ملے تھے، وہ کیا ملاقات تھی کیونکہ میرا خیال ہے اس معاملے میں وہ بہت اہم ملاقات ہے۔ کیانی میٹنگ کے لیے کیوں گئے تھے اور اور اس وقت افغانستان میں امریکی کمانڈر کون تھا۔ درانی نے جواب میں کہا: ڈیوڈ پیٹریاس۔ اس پر مسٹر دولت نے کہا کہ کیا یہ امر باعث حیرت نہیں کیونکہ دو دن بعد امریکیوں نے اسامہ کو اٹھا لیا۔ جنرل درانی نے اس پر کہا میں متفق ہوں ۔

پاکستان کی یہ جرات کے ہمارے آدمی کو جیل میں رکھے

جنرل درانی نے کہا اسامہ ریڈ سے پہلے کیانی کا ڈیوڈ پیٹریاس سے ملنا اس سلسلے کی اہم کڑی ہو سکتا ہے، پاکستان کی طرف سے میری تنقید کی وجہ یہ ہے کہ چند ماہ پہلے ہی تو امریکہ نے جنرل کیانی اور پاشا سے ایک ڈیل کر کے اس سے روگردانی کی تھی، پھر آپ کیسے اس پر اعتماد کر سکتے ہیں۔ وہ ڈیل یہ تھی کہ ریمنڈ ڈیوس نے لاہور میں دو پاکستانیوں کو قتل کیا۔ مگر جب ڈیل کے بعد وہ محفوظ امریکا پہنچ گیا تو قبائلی علاقوں میں جرگے پر ڈرون حملہ کر کے پرامن شہریوں کو مار کر پیغام دے دیا گیا۔ سی آئی اے کا اس وقت کا سربراہ پاکستان کا دشمن تھا۔ اس حملے کے بعد کسی نے اس سے پوچھا کہ قبائلی جرگے پر حملے کی کیا ضرورت پڑ گئی تھی۔ حقیقت یہ ہے کہ وہ پاکستان کو یہ بتانا چاہتا تھا کہ تم لوگوں کی یہ جرات کیسے ہوئی کہ ان کے آدمی کو چھ ہفتے جیل میں رکھا۔

اسامہ کے خلاف آپریشن: ہمیں کیا ملے گا؟

سابق راچیف نے سوال کیا کہ اس ڈاکٹر کا کردار کیا تھا جو آپ نے جیل میں ڈالا۔ جنرل درانی نے اس پر کہا اس نے پولیو پروگرام کے پردے میں یہ پتہ لگایا تھا کہ اسامہ کہا ہے۔ اس پر دولت نے کہا مطلب وہ امریکہ کے لیے کام کررہا تھا۔ میرا خیال ہے کہ اسی ڈاکٹر کے ذریعے سے امریکیوں نے اسامہ کا سراغ لگایا اور پھر کیانی کو بتایا کہ ہم اب جانتے ہیں کہ وہ کہاں ہے۔ اور انہوں نے کیانی سے کہا کہ آپ تعاون کرو گے یا ہم اپنے بل پر یہ کریں؟ اس پر جنرل درانی نے کہا ہاں ایسا ہی لگتا ہے اور غالبا کیانی نے کہا ہوگا کہ یہ آپریشن کس طرح ہوگا اور یہ کہ بدلے میں ہمیں کیا ملے گا؟

ایک پاکستانی افسر نے اسامہ کی مخبری کی تھی

جنرل درانی نے کہا کہ اسامہ کے پکڑے جانے کی وجہ صرف ڈاکٹر آفریدی نہیں۔ مجھے ذرابرابر شک نہیں کہ ایک ریٹائرڈ پاکستانی افسر جو خفیہ میں تھا ، اس نے امریکہ کو مخبری کی تھی۔ میں اس شخص کا نام نہیں لے سکتا کیونکہ میں اس کو ثابت نہیں کر سکتا اور دوسری بات یہ کہ میں اسے خوامخواہ کی پبلسٹی بھی نہیں دینا چاہتا۔ پچاس ملین ڈالرز میں سے اسے کیا ملا ، کوئی نہیں جانتا۔ لیکن یہ شخص آجکل پاکستان میں نہیں ہے۔ مسٹر دولت نے اس پر کہا کہ شاید اسے کوئی فارم ہائوس مل گئے ہوں۔ جنرل درانی نے اس پر کہا ، ہاں۔

آئی ایس آئی میں سی آئے اے کا جاسوس کون تھا؟

مسٹر دولت نے کہا کہ ہم نے تو آئی ایس آئی میں سی آئی اے کے ایک جاسوس کی کہانی سنی ہوئی ہے آپ تو کہہ رہے ہیں  وہ کوئی ریٹائرڈ افسر تھا۔ اس پر درانی نے کہا کہ وہ اس وقت آئی ایس آئی میں نہیں تھا۔ ہم جس پیشے میں ہیں اس میں سب سے بڑا جرم کسی دوسرے ملک کی ایجنسی کے لیے کام کرنا ہے چاہے یہ ملک دوست ہی کیوں نہ ہو۔ آدیتیہ سنہا نے کہا شاید اسی وجہ سے بےچارہ شکیل آفریدی ابھی تک جیل میں ہے۔ شکیل آفریدی کا دوسرا جرم بھی ہے کہ اس نے نقلی پولیو پروگرام شروع کیا جس کی وجہ سے پولیو پروگرام متاثر ہوا اور بہت سے بچے پولیو کے قطرے پینے سے رہ گئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Scroll to top